Slideshow Image 1
Slideshow Image 2
Slideshow Image 3
Slideshow Image 4
Slideshow Image 4
Slideshow Image 4
Slideshow Image 4
Slideshow Image 4
Slideshow Image 4

قومی ریسپانس سینٹر برائے سائبر جرائم (NR3C)

قومی ریسپانس سینٹر برائے سیبر جرائم کا تعارف

انفارمیشن ٹیکنالوجی عالمی برادری میں ایک قوم کے طور پر ہمارے معاشرے اور معیشت پر اثر کررہی ہے۔بہت حقیقی معنوں میں "معلومات سپر ہائی وے"ہماری قوم کے لیے افتصادی لازم حیات بن گئی ہے۔

ہم ا نفارمیشن ٹیکنالوجی، کمپیوٹر اوراس کے ساتھ مربوط عالمی نیٹ ورک پر انحصارکر رہے ہیں۔ یہ انحصار ہماری افتصادی بہبود، اپنی قومی سیکیورٹی اور سلامتی کے لئے ایک واضح اور مجبور خطرہ بن گیا ہے۔

دنیا کا نیٹ ورک جس کو "سائبر سپیس" کا نام دیا گیا ہے کی کوئی حدود نہیں ہیں سائبر سپیس کے ذریعے بڑھتی ہوئی ربطہ سازی ہمارے روایتی اور نئے آنے والے دشمنوں ، دہشت گردی ، انتہا پسندوں ، منشیات کی اسمگلنگ اور منظم جرائم ، نفیس معلومات حملے کے آلے شمولیت اختیار کرتے جارہے ہیں۔معلومات حملے روایتی فوجی حملوں کی جگہ لے سکتے ہیں اور یہ بہت پیچیدہ اور خطرناک انداز ہے۔ جس کا اندازہ لگانا اور اس کے خلاف انسداد کی توسیع ضروری ہے۔

 

خطرے میں صرف سائبر سپیس پر محفوظ معلومات ہی شامل نہیں ہوتی بلکہ ہمارا مکمل قومی ڈھانچہ انفارمیشن ٹیکنالوجی اور درست اعداد و شمار کی بروقت دستیابی بھی ہے۔

اس میں مواصلاتی نظام خود ہماری بینکاری اور مالیاتی نظام، ہمارے نقل و حمل کے نیٹ ورک، ہنگامی خدمات جیسے کہ پولیس ، آگ اور ریسکیو اور تمام سطح پر حکومت کی کاروائیاں شامل ہیں۔ یہ تمام افتصادی کامیابی اور قومی سلامتی کے لئے ضروری ہیں۔ ان تمام کو نقطہ نظر رکھتے ہوئے این آر تھری سی(NR3C)کا قیام کیا گیا۔

  • وفاقی تحقیقاتی ادارے اور حکومت پاکستان کی صلاحیت کو بڑھتے ہوئے سائبر جرائم کی روک تھام کے لئے موثر طریقے سے بہتر بنانا
  • ملک بھر میں تمام ا قسام کے سائبر جرائم کے بارے میں رپورٹنگ اور تحقیقاتی سینٹر
  • سائبر کے مجرموں کے مقدمات سے نمٹنے کے لئے تمام متعلقہ قومی اور بین الاقوامی تنظیموں کے ساتھ رابطہ
  • تمام حساس سرکاری اداروں میں اہم معلومات وسائل کو محفوظ بنانے کے لئے ضروری تکنیکی مدد فراہم کرتا ہے۔
  • باقاعدہ ریسرچ اور ڈویلپمنٹ کی سرگرمیوں کے لئے ایک مثالی تکنیکی مرکز کے طور طور پر عملدرامد مرکز
  • اہم بنیادی ڈھانچے کے مالکان اور سرکاری محکموں کو خطرات، حملوں اور بازیابی کی بروقت معلومات فراہم کرنا۔ کمپیوٹر ایمرجنسی ریسپانس سینٹر کا کردار ہے۔
  • مقامی پولیس کو (سٹیٹ آف دی آرٹ) جدید الیکٹرانک فارنسک خدمات اور سائبر تحقیقات کی فراہمی
  • سیکیورٹی ایجنسی اور واقعے سے نمٹنے کے لئے مقامی صلاحیت کی تعمیر
  • عالمی سیکیورٹی کے مسائل کی نگرانی اور آئی ٹی سیکیورٹی انٹیلی جنس کا مجموعہ
  • سائبر جرائم کے مقدمات سے نمٹنے اور تحقیقات کے لئے صلاحیتوں کی تعمیر
  • سائبر مجرموں کے خلاف مقدمہ اور تفتیش اور ہائی ٹیک جرائم سے نمٹنہ
  • کمپیوٹر جرائم کی روک تھام، صارفین اور انٹر نیٹ صارفین کی حفاظت کے لئے موجودہ قوانین کو نافذ کرنا

اب تک حاصل ہونے والی کامیابیاں

  • چالیس سے زیادہ منظم سیمینار اور ورکشاپس جس میں پاکستان کے مختلف شہروں سے متعلقہ ہزاروں افراد کی شرکت
  • NR3Cنے بنیادی سائبر تحقیقات ، تراکیب اور طریقوں پر قومی احتساب بیوروں کے 100 سے زائد اسروں کو تربیت فراہم کی ہے۔
  • ڈاس(DOS)حملوں کے بارے میں تمام سرکاری تنظیموں اور مالیاتی اداروں وغیرہ کو بر وقت مطلع کیا۔
  • NR3Cپاکستان کے تمام صوبوں کے پولیس افسران کو" جرائم کے منظر سے جمع ڈیجیٹل ثبوت "پر تربیت فراہم کر رہا ہے۔
  • انٹرنیٹ صارفین کے لاگ کی معیاد NR3Cکی کوششوں سے 45 دنوں سے بڑھا کر 90دن کر دی گئی ہے۔
  • نیشنل پولیس ٹریننگ مینیجمنٹ بورڈ نے پہلے ریسپانڈر کورس کی منظوری دے دی ہے۔
  • گذشتہ دو سالوں کے دوران NR3Cنے پاکستان میں ویب سائٹس کی بروقت رپورٹنگ کے حوالے سے ایک اہم کردار ادا کیا۔

سائبر جرائم کے لئے قومی رد عمل مرکز کی ماضی کی کاردگرگی درج ذیل ہے۔

اگاہی پروگرام

سائبر جرائم سے متعلق تمام معاملات کے لئے تمام مقامی اور غیر ملکی تنظیموں کے لیے رابطہ کی سنگل پوائنٹ فراہم کررہا ہے۔ یہ ادارہ حکومت /نیم سرکاری اور نجی شعبے کی تنظیم کے افراد کو تربیت اور سیکیورٹی سے متعلق تعلیم فراہم کررہا ہے۔ ملک کے مختلف شہروں میں بڑی تعداد میں سیمینار منعقد کئے گئے ، جن میں حساس سرکاری تنظیموں کی سینئر مینیجمنٹ کو ان کی معلومات کے وسائل پر سائبر حملوں کے بارے میں تربیت دی گئی معلومات خلاف ورزی اور اس طرح کے تمام خطرات کے خلاف محفوظ نظام بنانے کے لئے۔سیمنار کی تفصیل درج ذیل ہے۔

تاریخعنوانشرکاء کی تعداد سرکاری/ غیر سرکاری
26 اکتوبر 2002ءسائبر سیکیورٹی مشکلات اور مسائل کا حل (درمیانے درجے کا انتظام)80
25فروری 2003ءسائبر سیکیورٹی مشکلات اور مسائل کا حل (سینیر/بڑے درجے کا انتظام)200
2 جون 2003ءسائبر جرائم کا تعارف(جونیر سطح کے انتظام کے لئے)85
18جون 2003ء تنسیق کوشیش بینکنگ سابئر جرائم اور منی لانڈرنگ سے نمٹنے کے لئے(بینکاری کے شعبے کے سینئر اور ایگزیکٹوز کے لئے)40
10 جولائی 2003ءسائبر سیکیورٹی مشکلات اور حل (کراچی میں)200
12جولائی 2003ءسائبر سیکیورٹی مشکلات اور حل (لاہور میں)200
29 اگست 2003ءNR3Cکی طرف سے پہلے سائبر جرائم کیس کی چال20
4 اکتوبر 2003ءتنسیق کوشش برائے آئی ایس پی متعلقہ سائبر جرائم سے نمٹنے کے لئے30
9 فروری 2004ءسائبر جرائم برائےFIA,SIGاکیڈمی20
30 مارچ 2004ءاسلام آباد میں سائبر سیکیورٹی مشکلات اور حل200
24 مئی 2004ءاسلام آباد میں انفارمیشن سیکیورٹی اور سائبر جرائم200
27 نومبر 2004ءاسلام آباد میں انفارمیشن سیکیورٹی اور سائبر جرائم250
27 نومبر 2004ءکراچی میں سائبر سیکیورٹی کانفرنس200
ستمبر 2004ءڈیجیٹل ثبوت کے بارے میں پولیس ایجنسی افسران کی تربیت۔ اسلام آباد، پشاور، لاہور، کراچی ، کوئٹہ اور مظفر آباد کے علاقوں میں۔300
3 دسمبر 2007ءنیب کے ٹرینی افسران کو سائبر سیکیورٹی پر لیکچر52
17 دسمبر 2007ءایک روزہ سیمینار سائبر سیکیورٹی پرپنجاب سے 60 ٹرینی ججز
18 دسمبر 2007ءانفارمیشن سیکیورٹی پر نیب میں لیکچر35
28جنوری 2008ءانفارمیشن سیکیورٹی پر نیب میں لیکچر35
28 جنوری تا 30 جنوری 2008ءچار روزہ تربیت ورکشاپ نیشنل پولیس اکیڈمی میں تربیتی ASPsکے لیے۔37
4 مارچ 2008ءایک روزہ ورکشاپ برائے سائبر سیکیورٹی مشکلات اور حل60
12 اپریل 2008ءسائبر جرائم پر تعارفی لیکچر50
14 اپریل 2008ءسائبر دہشت گردی پر ایک روزہ سیمینار، حساس معلومات کے بنیادی ڈھانچے کے لئے خطرہ45
26اپریل 2008ءسائبر سیکیورٹی پر لیکچر65
28 اپریل 2008ءسائبر جرائم اور سائبر دہشت گردی کے اہم خطرے پر لیکچر50
8 مئی 2008ءایک روزہ بیداری سیمنار برائے سائبر جرائم/الیکٹراک جرائم150

پاکستان میں سائبر کرائم سے نمٹنا

اہم مقدمات جن سے نمٹا گیا ، درج ذیل ہیں۔

  • مالیاتی جرائم
  • ای میل دھمکیاں
  • سروس حملےاورDOSحملے
  • وائرس / ورام حملے
  • انٹرنیٹ وقت چوری
  • نظام تک غیر مجازی رسائی
  • کریڈٹ کارڈ دھوکہ دہی
  • ویب سائیٹ پر پاکستان/اسلام کے خلاف مواد
  • اے ٹی ایم دھوکہ دہی
  • موبائل کمیونیکیشن
  • سسٹم چدوری
  • ویب ایس ایم
  • فحاشی
  • انٹرپول مقدمات

مدد دوسری تنظیم کو فراہم کرتے ہیں

  • انفارمیشن سیکیورٹی کے حوالے سے مختلف مالیاتی اداروں کو بروقت مدد فراہم کی
  • پولیس محکمے کو ای میل اور ٹیلی فون پیغامات وغیرہ کی طرح الیکٹرونک ثبوت کے مقدمات بڑی تعداد میں پتہ لگانے میں مدد فراہم کی
  • سائبر قوانین کو حتمی شکل دینے میں مدد فراہم کی
  • اسلامی یونیورسٹی اور جوڈیشنل اکیڈمی کے ذریعے وکلاء اور ججوں کو تربیت فراہم کی

سائبر جرائم سے متعلق کچھ عالمی لنکس

www.american.edu/traccc/
The Transnational Crime and Corruption Center (TraCCC).
www.nhtcu.org
The National Hi-Tech Crime Unit.
www.bsa.org
Business Software Alliance - Types of Cyber Crime
www.cybercrimes.net
The University of Dayton School of law.
www.ojp.usdoj.gov/nij/
The National Institute of Justice (NIJ).
www.cops.org
International Association of Computer Investigative Specialists.
www.cpsr.org
Computer Professionals for Social Diversity: Computer Crime Directory.
www.cyber-rights.org
Cyberlaw Research Unit, Centre for Criminal Justice Studies, University of Leeds, UK.
www.cybercrime.gov
U.S. Department of Justice Criminal Division Computer Crime and Intellectual Property Section.
www.ncfs.ucf.edu
National Center for Forensic Science.
www.merchantfraudsquad.com
The Worldwide E-Commerce Fraud Prevention Network.
www.securitydocs.com
Directory of Security White Papers.
www.compinfo-center.com
CompInfo - The Computer Information Center.
www.gocsi.com
Computer Security Institute (CSI).
www.ists.dartmouth.edu
The Institute for Security Technology Studies (ISTS).
Crime.about.com
Law Enforcement agencies devote limited resources to fighting this type of crime.
www.isalliance.org
A Trusted and Reliable Public-Private Partnership for Information Sharing and E-Security Issues.
www.officer.com
The world's most popular law enforcement web site. Professional Association Directory.
www.excelcion.com
An Enterprise Network Security company headquartered in Massachusetts.
mishpat.net
Mishpat.Net - Internet Legal Information.
portal.brint.com
The Global Knowledge Network for Business, Information, Technology, and Knowledge Managers, Professionals, and Entrepreneurs.
www.investigation.com
Kessler International - Forensic Accounting, Computer Forensics, Corporate Investigation.
www.iipa.com
The International Intellectual Property Alliance (IIPA).
www.unesco.org
UNESCO Observatory on the Information Society.
www.fdle.state.fl.us/Fc3/
Florida Computer Crime Center (FC3).
www.leeds.ac.uk
The Department of Law at Leeds is recognised as one of the leading UK law schools.
Globaldisaster.org
Cyberterrorism Resource Center.
Fletc.gov
The Financial Fraud Institute (FFI).
Securities Fraud Class Action
Fraud Lawsuit information. Contact a fraud lawyer for all your legal needs!
Cybercopmail.com
The Home of Cybercop Internet Services.
Homeof.org
CyberSafe.US
Ahtcc.gov.au

  • مورخہ 13 جنوری 2017

    ویزے لۓ بغیر اسلام آبادآنے والے دو غیر ملکی ڈیپورٹ    مزید پڑھیں

  • مورخہ 05 جنوری 2017

    ترکی سے 4 پاکستانی ڈیپورٹ    مزید پڑھیں

  • مورخہ 07 د سمبر 2016

    یونان سے10 پاکستانی ڈیپورٹ   مزید پڑھیں

  • مورخہ 01 د سمبر 2016

    انسانی سمگلنگ کے ملزم کو 12 سال قید    مزید پڑھیں

  • مورخہ 28 نومبر 2016

    انسانی سمگلرگرفتار کرلیا گیا   مزید پڑھیں

  • مورخہ 27 نومبر 2016

    ترکی سے 7 پاکستانی ڈی پورٹ    مزید پڑھیں

لیگل

وفاقی تحقیقاتی ادارہ © تمام حقوق محفوظ ہیں۔

DESIGNED BY: NR3C

Privacy Policy

Site Map

رہنمائی اور آرا

ادارے کے بارے میں عمومی سوالات

پتہ : ایف آئی اے ہیڈ کوارٹرز، جی 9/4، اسلام آباد پاکستان۔

ہیلپ لائن:786-345-111

ای میل: complaints@fia.gov.pk